کاروباری مراکز شام 6 بجے بند ہفتہ ، اتوار مکمل چھٹی کا فیصلہ

اسلام آباد، پشاور، ملتان (مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی) کورونا وائرس کے باعث پنجاب میں نافذ پابندیوں اور کاروباری اوقات میں تبدیلی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ۔محکمہ صحت کے مطابق جاری کیے گئے نوٹیفکیشن کا اطلاق فی الفور ہو گا اور 29 مارچ تک نافذ العمل رہے گا۔نوٹیفکیشن کے مطابق پنجاب میں کاروباری مراکز شام 6 بجے بند ہوں گے، ہفتے اور اتوارکو کام کی ہرگز اجازت نہیں ہو گی۔صوبے کے تمام سرکاری و نجی دفاتر 50 فیصد اسٹاف کے ساتھ کام کی پالیسی پر کار بند ہوں گے۔ لاہور،راولپنڈی، ملتان، سرگودھا، گوجرانوالہ ، گجرات اور فیصل آباد کے

ریسٹورانٹس اور کیفے میں انڈور ڈائنگ بند ہو گی۔ نوٹیفیکیشن کے مطابق تمام انڈور، آئوٹ ڈور میرج ہالز 15 مارچ سے بند ہوں گے۔کمیونٹی سنٹرز اور مارکیز 15 مارچ سے مکمل طور پر بند کر دئیے جائیں گے۔ سماجی و مذہبی تقریبات کے لیے 50 افراد کی اجازت ہو گی۔7 بڑے شہروں کے علاوہ باقی اضلاع میں 300 سے زائد افراد کے جمع ہونے پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے۔اس کے علاوہ تمام مزارات ،درگاہیں اور سینما ہالز بھی مکمل طور پر پند ہوں گے۔تمام تفریحی مقامات اور پارکس کو 6 بجے بند کر دیا جائے گا۔تاہم میڈیکل اسٹور، لیبارٹریاں، کولیکشن پوائنٹس پورے ہفتے 24 گھنٹے کھلے رہیں گے۔جنرل اسٹورز، چکیاں، فروٹ ، سبزی، تندور، ورک شاپس، اسپیئر پارٹس، فلنگ پلانٹس ، زرعی مشینری و آلات کی دکانیں اورپٹرول پمپ بھی 24 گھنٹے کھلے رکھنے کی اجازت ہو گی۔دوسری جانب این سی او سی کی جانب سے گجرات شہر میں 15مارچ سے دو ہفتے کیلئے تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔گجرات میں کورونا کیلئے مختص عزیز بھٹی شہید ہسپتال کا وارڈ مریضوں سے بھر گیا ، اضافیفیلڈ ہسپتال قائم کردیا گیا ، ایک دیہات میں اسمارٹ لاک ڈائون اوردواسکول بھی سیل کردیئے گئے۔ضلع گجرات کے عزیز بھٹی شہید ٹیچنگ ہسپتال کے کورونا وارڈ میں 60 بستروں کی گنجائش تھی، ہسپتال بھر جانے پر اسکی گنجائش 120بستروں تک بڑھا دی گئی ہے۔گجرات میںکورونا مریضوں کی تعداد 75تک جاپہنچی ،فعال کیسز کی تعداد2500 سے بھی تجاوز کر چکی ہے۔این سی او سی کی جانب سے گجرات شہر میں بھی 15مارچ سے دو ہفتے کے لئے تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ڈپٹی کمشنر سیف انور چیمہ نے بتایا کہ گجرات میں شہریاکثر بیرون ملک سفر کرتے ہیں، سفر کے لئے لازمی ٹیسٹ کی صورت میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوجاتی ہے، شہریوں کو ایس اوپیز کا خیال رکھتے ہوئے زیادہ احتیاط کرنی چاہیے۔گجرات میں اب تک ایک ڈاکٹر سمیت 80 افراد کورونا وائرس سے لقمہ اجل بن چکے ہیں، تیسریلہر میں کورونا ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد نہیں کیا گیا تومتاثرہ مریضوں کی تعداد اور بھی بڑھ سکتی ہے۔ دریں اثنا پشاور کی ضلعی انتظامیہ نے کورونا وائرس کے پھیلائو کے خدشے کے پیشِ نظر مختلف مقامات میں مائیکرو اسمارٹ لاک ڈائون نافذ کر دیا گیا پشاور کیضلعی انتظامیہ کے اعلامیے کے مطابق پشاور کے علاقے گلبہار نمبر 4، ڈیفنس کالونی، حیات آبادفیز 1 اورفیز 6 کی ایک، ایک گلی میں لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا، ان مقامات میں لاک ڈاؤن شام 6 بجے سے نافذ کیا گیا اور ان آؤٹ انٹری بند رہی۔ اعلامیے کے مطابق کورونا وائرس کے کیسزرپورٹ ہونے کی وجہ سے اسمارٹ لاک ڈاؤن لگایا گیا ہے۔اشیاء خورونوش، میڈیکل اسٹورز، جنرل اسٹور، تندور اور ایمرجنسی سروسز کی دکانیں کھلی رہیں جبکہ اسمارٹ لاک ڈاؤن کے دوران مساجد میں 5 افراد کو باجماعت نماز پڑھنے کی اجازت دی گئی ۔ اعلامیے کے مطابق متعلقہمجسٹریٹ اور پولیس کو لاک ڈاؤن پر عمل درآمد کیلئے ہدایات جاری کردی گئیں جبکہ لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کااعلان کیا گیا ۔اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ مائیکرو اسمارٹ ڈاؤن لگانے کا مقصد کورونا کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔ علاوہ ازیں ملتانمیں کورونا وائرس کے ایس او پیز کی خلاف ورزی پر 2 شادی ہالز سیل کر دئیے گئے۔ملک بھر میں کورونا وائرس کی تیسری لہر کا آغاز ہوچکا ہے جس کے بعد حکومت کی جانب سے شادی ہالز ، ریسٹورنٹس سمیت عوامی اجتماعات پر پابندی عائد کردی گئی۔پابندی کے باوجود ملتان کے معصوم شاہ روڈ پر واقع 2 شادی ہالز میں شادی کے فنکشن جاری تھے جنہیں اسپیشل مجسٹریٹ نعمان عابد نے کارروائی کرتے ہوئے سیل کر دیا۔

موضوعات:

شک کی فہرست

مخدوم سمیع الحسن گیلانی این اے 174 بہاولپور سے پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی ہیں‘ اوچ شریف کے گیلانی خاندان سے تعلق رکھتے ہیں‘ والد سید مختار حسن گیلانی قتل ہو گئے تھے‘ ان کی والدہ یوسف
رضاگیلانی کی کزن ہیں چناں چہ یہ والدہ کے ساتھ بچپن میں ملتان چلے گئے اور ان کی پرورش ….مزید پڑھئے‎

مخدوم سمیع الحسن گیلانی این اے 174 بہاولپور سے پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی ہیں‘ اوچ شریف کے گیلانی خاندان سے تعلق رکھتے ہیں‘ والد سید مختار حسن گیلانی قتل ہو گئے تھے‘ ان کی والدہ یوسف رضاگیلانی کی کزن ہیں چناں چہ یہ والدہ کے ساتھ بچپن میں ملتان چلے گئے اور ان کی پرورش ….مزید پڑھئے‎

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *