پشاور کی بڑی سرکاری یونیورسٹی میں جعلی ڈگری اسکینڈل منظر عام پر آ گیا، نو سال کے نتائج مشکوک قرار، کئی اہلکاروں کو جبری ریٹائر، برطرف کرنے کی سفارش کردی گئی

پشاور(این این آئی)اسلامیہ کالج یونیورسٹی پشاور میں جعلی ڈگری اسکینڈل منظر عام پر آگیا ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق 2008سے 2016 کے امتحانی نتائج کو مشکوک قرار دے دیا گیا ہے، رپورٹ میں 9 سال کے نتائج کو دوبارہ چیک کرنے کی سفارش کی گئی ہے، انکوائری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جعل سازی کے واقعات کے ٹھوس شواہد مل گئے ہیں۔ گورنر انسپیکشن ٹیم نےکئی اہلکاروں کوجبری ریٹائر، برطرف اور انکریمنٹ روکنے کی سفارش کی ہے۔رپورٹ کے مطابق جونیئر کلرک بلال نے نتائج میں ردوبدل کے عوض بھاری رشوت وصول کی، یونیورسٹی کے کئی اہلکار جعلی ڈگری اسکینڈل میں

ملو ث ہیں۔انکوائری رپورٹ میں یونیورسٹی میں غیرقانونی بھرتی کی گئیں دو خواتین سیکورٹی اہلکاروں کو برطرف کرنے کی سفارش بھی کی گئی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *