اگلے عام انتخابات میں الیکٹرانک ووٹنگ کے استعمال کے منصوبے میں بڑی پیشرفت، اپوزیشن کے شدید تحفظات

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اگلے عام انتخابات میں الیکٹرانک ووٹنگ کے منصوبے پر پیش رفت کیلئے الیکشن کمیشن نے نجی شعبے کے ماہرین کی خدمات حاصل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔روزنامہ جنگ میں طاہرخلیل کی شائع خبر کے مطابق اسلام آباد میں ذرائع کا کہنا ہے کہالیکشن کمیشن نے الیکٹرانک ووٹنگ کے منصوبے پر سنجیدہ اقدامات کئے ہیں۔ الیکشن کمیشن کے آئی ٹی شعبے میں الیکٹرانک ووٹنگ سیل قائم کیا گیا ہے جس کے سربراہ ڈی جی آئی ٹی بنائے گئے ہیں۔ علاوہ ازیں الیکشن کمیشن نے ای ووٹنگ منصوبے پر تیزی سے پیش رفت کیلئے فیصلہ کیا ہے کہ نجی شعبے

کے ماہرین کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔ اس ضمن میں ضروری کارروائی کی جارہی ہے۔لیکن قانون سازی کے بغیر انتخابات میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینزمتعارف کروانے کی حکومتی خواہش محض ایک نعرہ رہے گی۔اس کے لیے قانون سازی اپوزیشن جماعتوں سے اتفاق رائے کے بعد ہی ممکن ہے۔ جب کہ اپوزیشن نے اس تجویز کو اس لیے مسترد کردیا ہے کیونکہ ای وی ایمز بھی آر ٹی ایس کی طرح کا ایک آلہ ہوگا، جو کہ 2018 کے عام انتخابات میں خراب ہوگیا تھا اور اس کی وجہ سے انتخابی عمل مشکوک ہوگیا تھا۔روزنامہ جنگ میں طارق بٹ کی شائع خبر کے مطابق اپوزیشن کا ماننا ہے کہ ای وی ایمز میںشفافیت کی کمی ہے، اس کی نشان دہی آزاد اداروں نے بھی کی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے مشیر پارلیمانی امور بابر اعوان کو ہدایت کی ہے کہ وہ جلد از جلد ای وی ایمز متعارف کروانے اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ووٹنگ کا حق دینے کے عمل کو حتمی شکل دیں۔بابر اعوان اس ضمن میں متعلقہ اداروں کے ساتھ مذاکرات کررہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *