اللہ پاک کے اس نام کا ورد کریں ،آنکھوں پر لگے موٹے موٹے شیشے والا چشمہ اتر جائے گا 

[ad_1]

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) اللہ کے نام کا وظیفہ جو بھی اس وظیفے کو کرے گا انشاء اللہ تعالیٰ اللہ اس کی آنکھوں کو تیز بنا دیں گے۔ نظر تیز ہو جائے گی حتی ٰ کہ یہاں تک کہا گیا ہے کہ اگر کوئی ایسا انسان جو کہ اندھا ہو گیا ہو جس کی آنکھوں کی روشنی بالکل جاتی رہی ہو اگر وہ بھی اس عمل کو کر لے تو اللہ تعالیٰ اس کی روشنی کو دوبارہ لوٹا دیں گے تو اس عمل کو ضرور کیجئے اس کےعلاوہ کوئی مفلس ہے غنی ہو نا چاہتا ہے تو وہ بھی

اس عمل کو ضرور سن لے صرف اور صرف ایک نا م ہے جس کو آپ نے پڑھنا ہے۔ انشاء اللہ اس کے تمام تر فضائل حاصل ہوں گے کمزور نظر والے کی آنکھ کو اللہ تعالیٰ ترقی عطا فر ما ئیں گے اگر کہیں جسم میں درد ہوگا تو اس میں بھی اللہ تعالیٰ نفع عطا فر ما ئیں گے۔ وظیفہ بہت ہی زیادہ خاص ہے جس کو کرنے کے لیے بہت ہی کم وقت کی مقدار چاہیے ہو گی جس سے بہت ہی زیادہ فائدہ ہوگا۔ وہ اللہ تعالیٰ کا ایک نا م ” یاشکور” کے بارے میں ہے اس کی خصوصیات بہت ساری ہیں اس کا مین جو وظیفہ ہے وہ نظر کو تیز کرنے کے حوالے سے ہیں سب سے پہلے یا شکور کا مطلب ہے وہ جا ن لیتے ہیں قدر دان یعنی تھوڑے عمل پر بہت زیا دہ ثواب دینے والا ہے صفاتی نام ہے۔ یا شکور جو کوئی بھی اس اسم کو اکتا لیس مرتبہ یعنی یا شکور اکتا لیس مرتبہ پڑھ کر پانی پر دم کر ے گا اور یہ پانی اپنی آنکھوں پر چھڑک لے گا تو انشاءا للہ اس کی نظر تیز ہو جائے گی اور اس کے ساتھ ساتھ ان کو بہت سے فوائد بھی حاصل ہوں گے ان کو بہت سی بیماریوں سے بھی نجات ملے گی ۔ اور آنکھوں کی نظر بھی مضبوط ہو جائے گی۔ انشاء اللہ آئندہ بھی ان کی نظر کمزور نہیں ہوگی صرف اور صرف اکتا لیس مرتبہ اس کو پڑھنا ہے آپ نے پانی پر دم کر لینا ہے پانی پر دم کر کے اپنی آنکھوں پر پانی چھڑک لینا ہے۔ اس کے علاوہ اگر کوئی بندہ یعنی دمہ کا شکار ہےیا گرانی اعضاء محسوس ہوتی ہے کہ ہر وقت اس کو تھکان رہتی ہو پٹھوں میں درد ہوتا ہے جسم میں درد ہوتا ہے تو وہ بھی اس اسم کو پڑھ لے گا صرف اور صرف اکتا لیس مرتبہ پانی پر دم کر کے پی لے گا تو انشاء اللہ نفع ہو گا دمہ والے مریض کر یں گے تو ان کا دمہ بھی ٹھیک ہو جائے گا اور جو لوگ آنکھوں کے لیے کر یں گے ان کی نظر بھی ٹھیک ہو جائے گی۔



[ad_2]

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *