پانی کی تلاش میں تین بار پاک بھارت سرحد پار کرنے والا خوش قسمت بچہ ‎

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )پانی کی تلاش میں تین بار پاک بھارت سرحد پار کرنے کے باوجود خوش قسمت بچہ بحفاظت اپنے گھر پہنچ گیا ۔تفصیلات کے مطابق سندھ کے علاقے تھرپارکر کی تحصیل ڈاہلی کے گاؤں سے تین روز قبل ایک شادی کی تقریب میں شریک ذہنی معذور بچہ تقریب کے دوران پیاس بجھانے کیلئے اردگرد پانی نہ ملا تو ایک ہاتھ میں پلیٹ رکھ کر پانی کی تلاش میںنکل پڑا گائوں کے قریب سرحد غلطی سے ایک ہی وقت میں تین بار پاک بھارت سرحد عبور کرگیا تھا اور اس نے ایسا صرف پینے کے پانی کی تلاش

میں کیا۔تھرپارکر کے گاؤںایسے ہیں ان کے اردگرد سرحد لگتی ہے ۔ تو ایسے ہیں جن کے تینوں اطراف پر پاک بھارت سرحد لگتی ہے، پانی کی تلاش میں کریم نے بارڈر کی باڑ کو اس مقام سے عبور کرلیا جو مویشیوں کے آنے جانے کیلئے چھوڑی گئی ہے اور بھارت میں داخل ہوگیا۔بھارتی اہلکاروں نے اسے پکڑا اور اسے سے پوچھ گچھ شروع کی، تو انہیں معلوم ہوا کہ بچہ ذہنی معذور ہے انہوں نے اسے واپس بھیج دیا ۔ بچہ دوبارہ پانی کی تلاش میں پھر سرحد عبور کر کے بھارت میں داخل ہو گیا ، بھارتی اہلکاروں نے اسے دوبارہ واپس اسی راستے پاکستان بھیج دیا ۔ جب کرم ڈنو نے سرحد تیسری بار عبور کی تو اہلکاروں نے اسے پکڑ لیا ،بچے کو اپنے والد اور اپنے علاقے کے علاوہ کچھ نہیں آتا تھاجس پر بھارتی اہلکاروں نے پاک رینجرز سے رابطہ کیا اور بچے سے متعلق تمام تفصیل بتائی جس کے بعد پاک رینجرز بچے کوگائوں لا کر اس بچے کو اس کے والد کے حوالے کیا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *