سابق چیف جسٹس سعید الزمان صدیقی کی اہلیہ بھی قبضہ مافیا کے ہاتھوں نہ بچ سکیں، انصاف دینے والوں کی اولادیں انصاف کیلئے اپیلیں کرنے لگیں

اسلام آباد(آن لائن) سابق چیف جسٹس وگورنر سعید الزمان صدیقی کی اہلیہ بھی قبضہ مافیا کے ہاتھوں ستائے جانے کا انکشاف ہوا ہے ،مقدمہ درج ہونے کے باوجود بھی انصاف کے لیے ترستی رہیں،مرحومہ کے وفات پانے کے بعد مرحوم جسٹس کا بیٹا نشانہ پر آ گیا ،اسلام آباد سے کراچی تک بااثر قبضہ مافیا پیچھا کرتے پہنچ گیا،ملکی تاریخ میںانصاف دینے والوں کی اولادیں انصاف کی اپیلیں کرنے لگے ہیں،معلومات کے مطابق افنان سید الزمان نے تھانہ کراچی ڈیفنس میں درخواست دی کہ اسلام آباد میں تین ایکڑ پانچ کنال کے پلاٹ پر قبضہ کرنے کے لیے عرفان اللہ

کنڈی نے مجھ اور میری والدہ پر فائرنگ کی تھی اور جس کا مقدمہ بنی گالا تھانہ میں درج ہے ،تاہم پلاٹ کو چھوڑ کر جب ہم کراچی پہنچے تو مذکورہ قبضہ مافیا کا ڈان عرفان اللہ کنڈی نے میری والدہ مرحومہ کو فون کالز کر کے زندگی ختم کرنے کی دھمکیاں دیکر جائیدادیں مانگ رہے تھے ،تاہم میری والدہ نہ مانیں ،اب جبکہ میری والدہ کا انتقال ہوا تو مذکورہ شخص نے مجھ سے دو بار رابطہ کیا کہ میرے ساتھ ڈیل کر لیں بصورت دیگر زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھو گے ،افنان نے درخواست میںموقف اپنایا کہ گزشتہ روز میرے گھر کے باہر فائرنگ کی گئی جس میں عرفان کنڈی کے بھانجے اور بھتیجے شامل ہیں کیونکہ وہ میری گلی میں رہتے ہیں اور انکی فائرنگ سے میرا سیکورٹی گارڈ بھی زخمی ہو گیا ہے ،سابق چیف جسٹس کے بیٹے نے اپیل کی ہے کہ میرے مرحوم بابا کی خدمات کو سامنے رکھ مجھے انصاف فراہم کیا جائے مذکورہ بااثر قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی کی جائے۔  سابق چیف جسٹس وگورنر سعید الزمان صدیقی کی اہلیہ بھی قبضہ مافیا کے ہاتھوں ستائے جانے کا انکشاف ہوا ہے ،مقدمہ درج ہونے کے باوجود بھی انصاف کے لیے ترستی رہیں،مرحومہ کے وفات پانے کے بعد مرحوم جسٹس کا بیٹا نشانہ پر آ گیا

Leave a Comment